Marjan Stone (Coral Stone) Benefits In Urdu, Color & Price

Marjan Stone (مرجان پتھر) | Coral Stone is a very popular jewel, it has a dull taste, it has a dry and cold temperament, it is found at the bottom of the ocean and grows like an animal, Due to its cold temper, it is a mixture of iron and calcium carbonate.

(Marjan Stone) ٭ نام اور ماھیت:٭

مرجان پتھر بہت مشہور نگینہ ہے ٗ اس کا ذائقہ پھیکا ہوتا ہے ٗ اس کا مزاج خشک اور سرد ہے ٗیہ سمندر کی تہہ میں پایا جاتا ہے اور ایک جانور کی طرح نمو پاتا ہے ٗ باہر سے اس کا خول انتہائی سخت ہوتا ہے ۔پانی میں پیدا ہونے کے سبب سے اس کا مزاج سرد ہوتا ہے آئرن اور کیلشیم کاربونیٹ کا مرکب ہوتا ہے۔
مختلف زبانوں میں اس کے مختلف نام ہیں۔ مثال کے طور پر چند نام درج ذیل ہیں۔
٭پروال: سنسکرت میں مر جان کو پروال کا نام دیا گیا ہے۔
٭ مونگا: مرجان کو اردو میں مونگا کہا جا تا ہے۔
٭ کوریم پروالہ، پگالم ،سادھوپی: یہ مر جان کے ہندی نام ہیں اسے دورم بھی کہا جاتا ہے۔
٭بسد: مرجان کو فارسی میں مر جان کے علاوہ بسد بھی کہا جا تا ہے۔
٭عقيق البحر: عربی میں مر جان کوعقيق البحر (سمندری عقیق) کہا جاتا ہے۔

(Mononga Stone Color) رنگت

مرجان کو اس کے بیرونی خول کے رنگوں سے پہچان لیا جاتا ہے عام طور پر درج ذیل رنگوں میں پایا جاتا ہے۔
٭عمدہ قسم کے مر جان کا رنگ گہرا سرخ ہوتا ہے۔ ٭ خون کبوتر کی مانند ارغوانی۔ ٭ بھور۔ ٭کالا- ٭ پیلا۔ ٭گلابی۔ ٭ سفید۔

کیمیائی عناصر

مرجان میں درج ذیل کیمیائی عناصر کے اجزاء پائے جاتے ہیں۔
کیلشیم،میگنیز ،سلیکا،پائیراٹ ،آئزن ،کروم ،آرنا کسٹینڈ ،اس میں زیادہ مقدار آئرن اور کیلشیم کی ہوتی ہے۔

مقام پیدائش

کچھ جواہرات یا نگینے پتھروں میں پیدا ہوتے ہیں لیکن مرجان پانی میں نمو پاتا ہے یہ در اصل شہد کے چھتے کی طرح سوراخ دار رنگ کی لکڑی ہے جو سمندر کی تہہ میں پتھر سے چمٹی ہوتی ہے اور پتھر سے بھی اگتی ہے اس کی شاخیں پتوں اور پھولوں سےعاری ہوتی ہیں البتہ اس کی جڑ ہوتی ہے عمد وقسم کا مرجان زیادہ تر اٹلی کے ساحلوں پر پایا جاتا ہے بحیر روم، خلیج فارس، بحرہند، اور افریقہ، جاپان، کے سمندروں کے علاوہ یہ تیو نس اورسسلی کی آبی گزرگاہوں (آبنائے) سے بھی نکالا جاتا ہے۔

(Marjan Stone Price) مرجان پتھر کی قیمت

مرجان کی قیمت اس پتھر کے رنگ،بناوٹ اور معیار پر منحصر ہوتی ہے۔ سب سے اچھا مرجان ٗ اٹالین مرجان ہے ٗ اس کی قیمت 1400روپے فی قیراط سے لے کر7000روپے فی قیراط تک ہو سکتی ہے ٗاور انڈین مرجان پتھر کی قیمت 700 روپے فی قیراط سے لے کر 2200 روپے فی قیراط ہو سکتی ہے۔

(Marjan Pathar ki Pehchan) مرجان پتھر کی پہچان

تمام پتھروں میں یہ واحد پتھر ہے جس کونقلی یا جعلی نہیں بنایا جاسکتا ہے اس پتھر کو گوبر کے اُپلوں کی آگ میں جلایا جائے تو بالکل راکھ بن جاتا ہے اور یہ راکھ سفوف سازی میں استعمال کی جاتی ہے۔

مذہبی حیثیت

مرجان کو ہندو ازم میں خاص اہمیت حاصل ہے یہ نگینہ ہندوؤں میں بہت مقدس سمجھا جاتا ہے۔ اس مذہب کی خواتین مرجان کو مذہبی احترام کے ساتھ بڑے شوق سے استعمال کرتی ہیں ہندو اپنی مذہبی رسومات میں اس پتھر کو اپنے دیوی دیوتاؤں
کی بھینٹ بھی چڑھاتے ہیں۔

تاریخی اہمیت بحوالہ قرآن پاک

مسلمانوں میں اس پتھر کا احترام اس لیے بھی پایا جاتا ہے کہ اللہ تعالی نے سورہ رحمٰن میں انسان کے لیے اپنی نعمتوں کا ذکر کرتے ہوئے ‘ اس سورہ کی بائیسویں آیت میں مر جان کا ذکر کیا ہے کہ یہ قدرت کی بے شمار نعمتوں میں سے خاص نعمت ہے ‘اس کا دیدہ زیب رنگ خواص اثرات اور افعال بہت مفید و لطیف ہیں ‘ قرآنِ کریم میں مذکور ہونے کے سبب زمانہ قدیم سے اس پتھر کی تسبیح کا رواج چلا آ رہا ہے۔

مرجان سے متعلقہ روا يات

الف لیلیٰ کے قصوں‘ علی بابا چالیس چور اور حاتم طائی کی کہانیوں میں مر جان کا ذکر ملتا ہے اس کے علاوہ اس سے بعض روایات اور واقعات بھی وابستہ ہیں جو کہ بطور مثال درج ذیل ہیں۔
٭ ایک روایت ہے کہ پاتال میں بیلوں نے زمین ( کرہ ارض) کو اپنے سینگوں پر اٹھا رکھا ہے ان بیلوں کی دم آنکھیں اور سینگ مرجان سے بنے ہوئے ہیں۔
٭ یونانی اور رومی اپنے بحری جہازوں اور ملاح کو سمندری آفات و حادثات اور تباہی سے بچانے کے لیے بادبان کے ساتھ مرجان پتھر کو باندھ دیتے ہیں ۔ ان کے خیال میں یا ان کے عقیدے کے مطاق مرجان پتھر ان کی حفاظت کرتا ہے۔
٭ وینس دیوتا کے مجسمہ کی آنکھیں مر جان پتھر کی ہیں۔
٭زیورس دیوتا (جو یونانیوں کا دیوتا ہے ) کا تاج مر جان سے بنا ہوا ہے۔

(Marjan Stone Benefits) مثبت اثرات و فوائد

٭ یہ پتھر کالا جادو اور دوسرے شیطانی و سفلی اعمال کے اثرات سے بچاتا ہے۔
٭ اگر مرجان کو بچوں کے گلے میں باندھا جائے تو وہ سائے اور آسیب کے اثرات سے محفوظ رہتے ہیں۔
٭ مرجان ان بچوں کو پرسکون نیند دیتا ہے جو سوتے میں ڈر جاتے ہیں ٗ یا نامعلوم وجہ سے روتے ہیں۔
٭اس پتھر کی دھونی سے بھوت ٗپریت ٗبدروحیں اور شیطان دور بھاگ جاتے ہیں۔
٭ مرجان کے اثر سے رزق میں اضافہ ہوتا ہے ٗیہ حصول رزق میں آسانی پیدا کرتا ہے۔
٭ یہ پتھر جادوٹونا اور سحر کے اثرات سے محفوظ رکھتا ہے۔
7- اس پتھر کے پہننے سے انسان کی طبیعت کفایت شعاری پر مائل ہوتی ہے۔
٭ مرجان بنی نوع انسان کے لیے آسودگی اور خوشحالی لاتا ہے ٗ یہ پتھر ہاتھ میں پہنا جائے تو اس کے اثرات سے تنگ دستی اور غربت و مفلسی دور ہوجاتی ہے۔
٭مرجان کو استعمال کرنے والوں میں مستقل مزاجی عزم و استقلال اور خود اعتمادی پیدا ہوتی ہے۔
مرجان کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے استعمال کرنے سے اگر کوئی فائدہ نہ ہوتو نقصان بھی نہیں پہنچا تا کیونکہ یہ ایک بے ضرر پتھر ہے یعنی اس پتھر سے بنائی گئی دواؤں کے غلط استعمال سے نقصان نہیں ہوتا اور انسان پر اس کے صرف مثبت اثرات پڑتے ہیں۔

طبی افعال و خواص

٭مرگی: مرگی کے مرض میں انتہائی فائدہ مند ہے اس مرض کو دور کرنے کے لیے اس پتھر کی انگوٹھی بنوا کر پہننی چاہیے ٗ جس وقت شمس وقمر کا اتحاد یا اجتماع ہواور زہرہ سے قران نہ ہو اس وقت سونے اور چاندی ہم وزن کی انگوھی پرنگینہ مر جان لگوا کر پہنا جائے تو فائدہ ہوتا ہے۔
٭مقوي معدہ ،جگر: مرجان معدہ اور جگر کو تقویت دیتا ہے یونانی حکیم جالینوس کے بیان کے مطابق اس پتھر کا سفوف بنا کر بہتے خون کی جگہ یا زخم پر چھڑکا جائے تو خون بند ہو جاتا ہے۔
٭جوڑوں کا مرض: یہ پتھر جوڑوں کے درد کے لیے مفید ہے ٗخاص طور پرگنٹھیا کو دور کرتا ہے۔
٭پیٹ اور امراض معدہ: مرجان پیٹ کے زخموں کو مندمل کرتا ہے ٗ السر اور معدہ کے کئی امراض میں فائدہ پہنچاتا ہے۔
٭ خون میں تیزابیت: یہ پھر انسانی جسم میں تیزابیت یعنی خون کی تیزابیت دور کرتا ہے ٗ ہاتھ پاؤں میں جلن کوبھی رفع کرتا ہے۔
٭تریاق زہر: مرجان ہہر قسم کے زہروں کا تریاق ہے ٗ یہ زہر اور زہریلے اثرات کو ختم کرتا ہے۔
٭زناننہ امراض: مرجان خواتین کی بیماریوں کا شافی علاج ہے ٗ اس کے استعمال کرنے سے حاملہ خواتین اسقاطِ حمل سے محفوظ رہتی ہیں ٗاس کے علاوہ بانجھ پن اور اٹھرہ کو بھی دور کرتا ہے۔ بچوں کی کھانسی میں مرجان مفید ثابت ہوتا ہے۔
٭مردانہ امراض: مرجان کے استعمال سے مردوں کے خاص امراض احتلام اور جریان دور ہو جاتے ہیں۔
٭امراض چشم: یہ پتھر تمام قسم کے امراض چشم (آنکھوں کی بیماریوں) میں مفید ہے۔
٭دماغی امراض: اس پتھر کو استعمال کرنے سے دائمی نزلہ ٗ زکام ٗ فالج ٗلقوہ اور مرگی کے امراض ختم ہوجاتے ہیں رعشہ کو بھی دور کرتا ہے۔
٭امراض خبيثہ: مرجان سے امراض امراض خبيثہ (مثال کے طور پر) سوزاک ٗ بواسیر ٗ آتشک اور جذام جیسے موذی امراض کا علاج کیا جاتا ہے۔
٭دافع جریان: یہ پتھر جسم میں خون کے اخراج (جریان) کو روکتا ہے یعنی جریان خون بند کردیتا ہے۔
٭مقوی اعضائے رئیسہ: مرجان انسان کے تمام اعضائے رئیسہ کوقوت دیتا ہے ٗ دل کی گھبراہٹ اور ہیجان کوختم
کردیتا ہے۔ 

استعمال کرنے کا اصول

یادرکھیے کسی پتھر سے فائدہ اٹھانے کے لیے پتھر کو کھایا چبایا نہیں جا سکتا ٗ اس طرح استعمال کرنے سے معدہ اور آنتوں کو بے حد نقصان پہنچتا ہے اور اکثر اوقات اس کا نتیجہ موت نکلتا ہے ٗ اس کے درست استعمال سے ہی فائدہ پہنچتا ہے ٗ احمق اور بے وقوف لوگ وہ ہوتے ہیں ٗ جو کسی پتھر کے خواص سے فائدہ اٹھانے کے لیے اسے کسی طریقہ یا ترکیب کے بغیر استعمال کرتے ہیں اور فائدے کے بجائے نقصان اٹھاتے ہیں ٗکیونکہ قدرتی اور فطری طور پر ہر چیز کے استعمال اور اس کے فائدہ اٹھانے کا ایک طریقہ اور تر کیب و ترتیب ہے ٗچنانچہ کسی بھی چیز یا پتھر کو بلاسوچے سمجھے استعمال کرنے کا نتیجہ اچھا نہیں ہوتا۔

بیرونی استعمال

بیرونی استعمال سے کسی پتھر سے فائدہ نہ پہنچے تو نقصان بھی نہیں ہوتا ۔ بیرونی طور پر پتھر یا نگینہ جسم کے کسی حصے میں باندھا یالٹکا یا جاسکتا ہے۔ انگوٹی میں جڑوا کر انگلی میں پہنا جاتا ہے یا لاکٹ بنوا کر گلے میں لٹکایا جاسکتا ہے یا کسی صاف اور پاک
کپڑے میں سی کر تعویذ کے طور پر گلے ٗبازو ٗ پیٹ ٗران یا پنڈلی کے ساتھ باندھا جاتا ہے ٗالغرض پتھر کو کتاب میں دی گئی ہدایات کے مطابق استعمال کیا جائے یا کسی ماہر طبیب سے استعمال کا طریقہ معلوم کر لیا جائے ٗ یا در کھے پتھروں کو صرف درست طریقے ہی سے استعال کر کے ان کے خواص و اثرات سے فائدہ حاصل کیا جاسکتا ہے۔

اندرونی استعمال

اس کا مطلب ہے پتھر کو کھانے کی دوا کے طور پر منہ کے ذریعے استعمال کیا جائے ٗ صرف اس صورت میں کہ اس پتھر کا سفوف بنالیا جائے ٗ سفوف بنانے کا طریقہ صرف ماہر طبیب اور حکیم ہی جانتے ہیں ٗ عام لوگ کتابوں میں پڑھ کر یا سنے سنائے کشتے بناتے ہیں ٗ تو اکثر اوقات سفوف کچارہ جاتا ہے ٗ جو نقصان دہ ہوتا ہے ٗ اس لیے ضروری ہے کہ کسی ماہر طبیب سے ہی سفوف بنایا جائے یا کسی مستند دواساز ادارے کا بنایا ہوا سفوف خرید کر استعمال کیا جائے ٗ یہ بھی نہایت ضروری ہے کہ سفوف جعلی نہ ہو چنانچہ کسی قابل اعتما دحکیم یا پنساری سے لیا جائے۔ 

Mahmood

Proud Tips | The largest Urdu web site of general knowledge about Gemstone Name in Urdu, Horoscope in Urdu, Islamic Names, Islam, Baby Names, kids, And More...

Leave a Reply